ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران سے جوہری معاہدے کی توثیق کردی

امریکی بدزبان صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک بار پھر اپنے ہی اعلان کے خلاف یوٹرن لیتے ہوئے ایران کے ساتھ عالمی جوہری معاہدے کی توثیق کردی ہے،،عالمی ماہرین کے مطابق ٹرمپ انتظامیہ نے فیصلہ عالمی دباؤ کے باعث کیا۔
امریکی صدر نے ایران سے جوہری معاہدہ ختم کرنے کا اعلان موخر کردیا۔ امریکی میڈیاکے مطابق ٹرمپ نے ایران کو 120 دن کی ڈیڈلائن دے دی۔
ٹرمپ کا کہنا ہے کہ اپنے ذاتی ارادے کے باوجود اس وقت ایران معاہدہ ختم نہیں کررہا،یورپی اتحادی ایران ایٹمی معاہدے میں خامیوں کو دور کرنے میں مدد کریں۔
امریکی صدر نے متنبہ کیا کہ اگر یورپی ممالک نے مدد نہ کی تو امریکا ایران ایٹمی معاہدہ ختم کردے گا۔
اس سےقبل برطانیہ، فرانس اور جرمنی نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ پر زور دیاتھا کہ وہ ایران کے ساتھ جوہری معاہدے کو برقرار رکھیں۔
تینوں ممالک کے وزراء خارجہ اور یورپی خارجہ امور کی سربراہ فیڈریکا موگرینی نے یک زبان ہوکر کہا کہ ایران کے ساتھ جوہری معاہدے کاکوئی متبادل نہیں ہے اور اس پر عائد پابندیاں معطل رہنی چاہئیں۔