یہ ہے دنیا کا سب سے چھوٹا موبائل فون

ایک کمپنی نے دنیا کا سب سے چھوٹا اور قابلِ استعمال موبائل فون بنانے کا دعویٰ کیا ہے جو صرف 13 گرام وزنی ہے جبکہ اس کی لمبائی بالغ انسان کے انگوٹھے سے بھی کم ہے۔ لیکن منفی بات یہ ہے کہ یہ ٹوجی نیٹ ورک سے آگے کے نیٹ ورک پر کام نہیں کرتا اور یہ نیٹ ورک دنیا…
اس کا نام زینکو ٹائنی ٹی ون رکھا گیا ہے اور اسکرین نصف انچ چوڑا ہے۔ موبائل فون کا وزن پانچ روپے کے دو عدد پاکستانی سکوں کے برابر ہے اور اسکرین ریزولیوشن صرف 64 ضرب 32 پکسل ہے۔ اس کی بیٹری کی قوت 200 ایم اے ایچ ہے جو تین دن چلتی ہے اور 180 منٹ تک بات کی سہولت فراہم کرتی ہے۔ فون بک میں 300 نمبر اور میسج فولڈر میں صرف 50 پیغامات ہی رکھے جاسکتے ہیں۔
 بیٹری مائیکرو یو ایس بی پورٹ کے ذریعے چارج ہوتی ہے۔ کمپنی کا دعویٰ ہے کہ یہ ایمرجنسی میں استعمال کرنے والا فون ہے اور کسی بھی طرح جدید ترین اسمارٹ فون کی جگہ نہیں لے سکتا ۔ اگر آپ رات کے وقت اپنا قیمتی اسمارٹ فون گھر چھوڑنا چاہتے ہیں تو یہ اس کا بہترین حل پیش کرتا ہے۔
 یہ فون ٹو جی نیٹ ورک پر کام کرتا ہے اور یہ سروس امریکہ، برطانیہ ، کینیڈا، یورپ اور ایشیا کے بعض ممالک میں ختم ہورہی ہے۔ تاہم تجزیہ نگاروں نے کہا ہے کہ یہ اتنا چھوٹا ہے کہ اس پر ایس ایم ایس ٹائپ کرنا اور فون کرنا قدرے مشکل ہے۔ اس کے مقابلے میں میکس ویل اسمارٹ شو فون زیادہ بہتر ہے اور ٹائنی ٹی ون اس کے آگے تھوڑا بے عمل نظر آتا ہے۔
 اس کی تجارتی پیمانے پر تیاری کےلیے انٹرنیٹ پر چندہ (کراؤڈ فنڈنگ) کیا جارہا ہے اور کمپنی کو 33 ہزار ڈالر درکار تھے جو اب بڑھ کر 96 ہزار ڈالر تک پہنچ چکے ہیں۔ توقع ہے کہ مئی 2018 تک یہ ٹائنی ٹی ون فون منظرِ عام پر آجائے گا جس کے ایک یونٹ کی قیمت 47 ڈالر یا پاکستانی 5 ہزار روپے کے قریب ہوگی۔